عالمی خبریں

مفتی تقی عثمانی نے سربراہ افغان طالبان ملا ہیبت اللہ کو خط لکھ دیا

خلیج اردو: ممتاز عالمِ دین مفتی تقی عثمانی نے افغان طالبان کے سربراہ ملا ہیبت اللّٰہ کو مراسلہ بھیجا ہے۔

مفتی تقی عثمانی نے اپنے خط میں کہا ہے کہ افغانستان میں لڑکیوں کی تعلیم کا مسئلہ دشمن نے پروپیگنڈے کا ذریعہ بنا لیا ہے۔

ان کا طالبان سربراہ کے نام خط میں کہنا ہے کہ اماراتِ اسلامیہ کے فراخدلانہ اور حکیمانہ اقدامات کی قدر کرتے ہیں۔

*’’ شرعی حدود کے تحت لڑکیوں کی تعلیم ضروری ہے‘*

متعلقہ مضامین / خبریں

مفتی تقی عثمانی کا اپنے خط میں مزید کہنا ہے کہ ہماری رائے میں شرعی حدود کے تحت لڑکیوں کی تعلیم ضروری ہے۔

ملا ہیبت اللّٰہ کے نام خط میں انہوں نے کہا ہے کہ تعلیم یافتہ خواتین ملک اور معاشرے کی اہم ضرورت ہیں۔

مفتی تقی عثمانی کا طالبان سربراہ کے نام خط میں کہنا ہے کہ یہ غلط تاثر ہے کہ اسلام یا اماراتِ اسلامیہ خواتین کی تعلیم کے خلاف ہیں۔

*’’لڑکیوں لڑکوں کیلئے علیحدہ تعلیم کا نظام ہونا چاہیے‘‘*

ان کا کہنا ہے کہ لڑکیوں کے لیے لڑکوں سے علیحدہ تعلیم کا نظام ہونا چاہیے، لڑکوں، لڑکیوں کے لیے الگ جگہ نہ ہونے کا مسئلہ حل کیا جا سکتا ہے۔
مفتی تقی عثمانی کا اپنے خط میں کہنا ہے کہ لڑکیوں کی تعلیم کے لیے اوقاتِ کار بنائے جا سکتے ہیں، مسئلے کو باہمی مشاورت اور تدبیر سے حل کیا جا سکتا ہے۔

ملا ہیبت اللّٰہ کے نام خط میں ممتاز عالمِ دین مفتی تقی عثمانی نے یہ بھی کہا ہے کہ مخالف پروپیگنڈے کی عملی تردید بھی اہم مقاصد میں شامل ہے۔

متعلقہ مضامین / خبریں

Back to top button