پاکستانی خبریں

الیکشن کمیشن نے سنی اتحاد کونسل کو مخصوص نشتیں دینے کی درخواست مسترد کر دی۔چیف الیکشن کمشنر،ممبر سندھ، کے پی کے اور بلوچستان نے نشستیں اکثریتی فیصلے کی حمایت کی جبکہ ممبر پنجاب بابر بھروانہ نے اکثریتی فیصلے سے اختلاف کیا۔

خلیج اردو
اسلام آباد:الیکشن کمیشن نے سنی اتحاد کونسل کو مخصوص نشتیں دینے کی درخواست مسترد کر دی۔چیف الیکشن کمشنر،ممبر سندھ، کے پی کے اور بلوچستان نے نشستیں اکثریتی فیصلے کی حمایت کی جبکہ ممبر پنجاب بابر بھروانہ نے اکثریتی فیصلے سے اختلاف کیا۔ سنی اتحاد کونسل کو قومی اسمبلی میں20خواتین اور3اقلیتی نشستوں الاٹ ہونی تھیں۔

الیکشن کمشین نے سنی اتحاد کونسل کو مخصوص نشستوں سے متعلق 22 صفحات پر مشتمل فیصلہ جاری کردیا ہے۔ الیکشن کمیشن نے آئین کے آرٹیکل 53 کی شق 6، الیکشن ایکٹ کے سیکشن 104 کے تحت فیصلہ سنایا۔ فیصلہ چار ایک کے تناسب سے جاری کیا گیا۔

 

الیکشن کمیشن کے فیصلے کے مطابق سنی اتحاد کونسل کو مخصوص نشستیں الاٹ نہیں کی جا سکتی، قانون کی خلاف ورزی اور پارٹی فہرست کی ابتدا میں فراہمی میں ناکامی کے باعث سنی اتحاد کونسل مخصوص نشستوں کی حقدار نہیں،سنی اتحاد کونسل نے مخصوص نشستوں کیلئے لسٹ جمع نہیں کرائی،یہ مخصوص نشستیں خالی نہیں رہیں گی،یہ مخصوص متناسب نمائندگی کے طریقے سے سیاسی جماعتوں میں تقسیم کی جائیں گی۔

 

الیکشن کمیشن نے تمام خالی مخصوص نشستیں دیگر جماعتوں کو الاٹ کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے مسلم لیگ ن ، پیپلزپارٹی، ایم کیو ایم اور جو یو آئی ف کو دینے کی درخواست منظور کی ہے۔ ممبر پنجاب بابر بھروانہ نے اکثریتی فیصلے سے اختلاف کرتے ہوئے لکھا کہ معزز ممبران کے ساتھ اس حد تک اتفاق کرتا ہوں کہ یہ سیٹیں سنی اتحاد کونسل کو الاٹ نہیں کی جاسکتیں،یہ مخصوص نشستیں آئین کے آرٹیکل 51 اور 106 میں ترمیم تک خالی رکھنی چاہئیں۔ میں حتمی فیصلے جزوی اتفاق کرتا ہوں،ترجیحی فہرست وقت پر جمع کرانا قانونی ضرورت تھی جو نہیں کراٸی گٸی۔

 

اختلافی فیصلے میں کہا گیا کہ متناسب نماٸندگی کی بنیاد پر باقی جماعتوں کو نشستوں کی تقسیم پر اختلاف ہے،آٸین واضح ہے کہ سیاسی جماعتوں کو جنرل نشستوں کی بنیاد پر مخصوص نشستیں الاٹ کی جاٸیں،مخصوص نشستیں آٸین کے آرٹیکل اکاون اور ایک سو چھ میں ترمیم تک یہ مشستیں خالی تصور کی جاٸیں گی۔ سنی اتحاد کونسل کو قومی اسمبلی میں20خواتین اور3اقلیتی نشستوں الاٹ ہونی تھیں۔

متعلقہ مضامین / خبریں

Back to top button